وہ جو مل گیا اسے یاد رکھ ، جو نہیں ملا اسے بھول جا

وہ جو مل گیا اسے یاد رکھ ، جو نہیں ملا اسے بھول جا،،،!!! اللّٰہ کا شکر ہے احسان ہے کہ ۲۰۲۲ عزت و خیر و عافیت سے گزر گیا اور ۲۰۲۳ کی صبح دیکھنا نصیب ہوئی۔ سب کی زندگی میں کچھ اچھا اور کچھ بُرا رونما ہوا ہوگا۔ جو ہوگیا سو ہوگیا۔

عقل کا تقاضہ یہ ہے کہ ماضی سمجھ کر تکلیف دہ یادوں کو ۲۰۲۲ میں ہی چھوڑ دیا جائے اور اعزاز سمجھ کر اچھے لمحوں کو یاد کرکے نئے سال میں تحفہ کے طور پر اعزاز کے ساتھ رکھا جائے۔ اور ہر ایک شخص کے لئے ایک سمت مقرر ہے جدھر وہ عبادت کے وقت منہ کیا کرتا ہے تو تم نیکیوں میں سبقت حاصل کرو۔

تم جہاں ہو گے اللہ تم سب کو جمع کرے گا بیشک اللہ ہر چیز پر قادر ہے۔ سورۃ البقرۃ آیت ۱۴۸ ہم میں سے ہر شخص اپنی زندگی کا ہیرو ہے۔ جینے کا مزہ ہی اعزاز کے ساتھ جینا ہے۔ اس دنیا میں کوئی شخص ایسا نہیں جس نے کوئی بھلائی نہ کی ہو۔ حضرت ابو امامہ باہلی رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ ایک شخص نے اللہ کے رسول ۖ سے سوال کیا کہ ایمان کی علامت کیا ہے؟

آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے جواب میں فرمایا: جب تیری نیکی تجھے خوش کرے اور تیرا گناہ تجھے برا لگے تو تو مومن ہے ، اس شخص پھر سوال کیا کہ اے اللہ کے رسول گناہ {کی علامت} کیا ہے ؟ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے جواب دیا : جس چیزسے متعلق تیرے دل میں کھٹک پیدا ہو اسے چھوڑدو ۔ (مسند احمد ٢٥٢٥، صحیح ابن حبان ٢٦٦١، مستدرک الحاکم ١ ١٤) یہ بھی اللّٰہ کا شکر ادا کرنے کا ایک طریقہ ہے کہ اپنی کی ہوئی بھلائیوں پر خوش ہوا جائے کہ اللّٰہ نے آپ کو اچھا کام کرنے کا اعزاز بخشا تاکہ مزید بھلائی کرنے کا عزم تازہ ہو اور خوشی حاصل ہو۔

پچھلے سال کیے گئے اچھے کاموں اور حاصل کی گئی نعمتوں اور اعزاوں کو یاد کرکے نئے سال کا آغاز کریں۔ اپنے پاس ایک فہرست بنائیں اور اس وقت کو یاد کرکے لطف اُٹھائیں۔ خوش رہیں آباد رہیں۔ #ارم

Leave a Reply

error

Enjoy this blog? Please spread the word :)